ارمغانِ حجاز: مہر و مہ و انجم نہيں محکوم ترے کيوں

ارمغانِ حجاز: مہر و مہ و انجم نہيں محکوم ترے کيوں

مہر و مہ و انجم نہيں محکوم ترے کيوں
کيوں تری نگاہوں سے لرزتے نہيں افلاک

Mehar-O-Mah-O-Anjum Nahin Mehkoom Tere Kyun
Kyun Teri Nigahon Se Larazte Nahin Aflaak

Why are the sun, moon and stars not under your suzerainty?
Why don’t heavens shudder with a mere glance from you?

تشریح:
اللّٰہ نے تو تجھ میں اپنا نائب ہونے کی صورت میں ایسی قوتیں رکھی ہوئی ہیں کہ جن سے تو آسمانوں، سورج، چاند اور ستاروں کو اپنے بس میں کر سکتا ہے۔ کیا بات ہے آج یہ اشیاء تیری اس نگاہ سے اور اس قوت سے کیوں نہیں کانپ رہیں اور کیوں وہ خدشہ محسوس نہیں کر رہیں کہ جن کی بدولت تو ان کو اپنا غلام بنا سکتا ہے اور ان کی قوتوں کو اپنی مرضی کیمطابق استعمال کر سکتا ہے۔
(شرح اسرار زیدی)