بیٹیوں کے دن پہ بیٹیوں کے نام!

بیٹیوں کے دن پہ بیٹیوں کے نام!

بیٹیوں کے دن پہ ہو تمہیں بہت بہت مبارک
خوشی خوشی میں جھوم کے اس دِن کو منائیے

پیارے نَبّیﷺ کا فرمان ہے بیٹی ہے خُدا کی رحمت
گھر میں گھر میں مُحَمَّدﷺ کا پیغام پہنچائیے

بنتِ ہواؑ ہو آپ  اور بنتِ بطولؓ بھی
دنیا کو اپنی شان سے راہ دکھائیے

ایماں کے چراغ کو کر دل میں فروزاں
اعمال  کو اپنے قرآں کے تابع بنائیے

اللّٰه نے بخشا ہے تمیں وہ رفعت بھرا عروج
    کُفر و شِرک کے میل سے اسے  بچائیے

ظُلم و سِتم کی تاریکیوں سے تمہیں کس نے کیا آزاد
   پیارے نَبّیﷺ کی  سنتوں کو سینے سے لگائیے

کردار تیرا سرمایہ ہے اِسے نیلام نہ کر
اندھیروں کے دَلدَل میں خود کو نہ پھنسائیے

لباس کو اپنے تن سے جانے نہ دیجیے
شرم و حیا کے ذیور سے خود کو سجائیے

اغیار کی مشابہت سے خود کو نہ کریں فنا
حضرت فاطمہؓ کو فقط اسوہ بنائیے

ماں باپ کی نظر میں ہو مہر و ماہ
کرنوں سے اُنکی دنیا کو روشن بنائیے

ایسا نہ ہو کہ تم بنو کبھی موجبِ زوال
خُدارا کبھی ماں باپ کا دل نہ دکھائیے

تیرے وجود سے رہے تصویرِ کائنات میں رنگ
صبغت اللّٰه سےاپنے  وجود کو ایسے چمکائیے

شؔوکت تمہیں معلوم رہے کہ ہے آج بیٹیوں کا دن
نصیحت بھرے بول چار انہیں سنائیے

( ~ شوکت بڈھ نمبل کشمیری  )