نعتِ رسولﷺ: محبوب دو جہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

نعتِ رسولﷺ: محبوب دو جہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

بسم اللّٰہ الرحمٰن الرحیم

محبوب دو جہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو
ہر سمت گلفشاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

جامیؓ بھی نہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو
سرمدؓ کے بھی یہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

قرنیؓ کی داستاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو
سعدیؓ کی بوستاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

جانے کہاں کہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو
ہر گل پہ حکمراں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

اک سرِ دو جہاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو
خالق کی رازداں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

ہے اسمِ پاک ان کا عرشِ بریں پہ لکھا ہوا
یوں فخرِ آسماں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

ملے مصطفٰی ہیں جس کو اُسے اور کیا طلب ہے
یہی جانِ عاشقاں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

نازاں ہو لاکھ ســـــورج اپنی تـــــمازتوں پر
مجھ پر تو سائباں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو

کیا ہے بساط تیری تو شمــــــعؔ جو لب کھولے
جب خود پہ نعت خواں ہے خیر البشرﷺ کی خوشبو