جب عشق سکھاتا ہے آدابِ خود آگاہی

جب عشق سکھاتا ہے آدابِ خود آگاہی

مشکل الفاظ کے معنی:

خود آگاہی : خود کو پہچاننا اور جاننا
اسرار : راز
اسرارِ شہنشاہی : وہ راز جو عام طور باشاہوں کے پاس ہوتے ہیں یا اُن پر صرف کھلتے ہیں
عطارؔ : شیخ فرید الدین عطار(1145ء – 1221ء) ، فارسی نژاد مسلمان شاعر، صوفی اور ماہر علومِ باطنی ۔ پیشے کے اعتبار سے ماہرِ ادویات تھے-
رومیؔ : محمد جلال الدین رومی (1207ء – 1273ء) ۔ مشہور فارسی شاعر، صوفی ، عالمِ دین ۔ پوری دُنیا میں اپنی مثنوی کی وجہ سے مشہور ہیں ۔
رازیؔ : علامہ فخر الدین الرازی ( 1150ء-1210ء) ،فارسی محدث ، فقیہ ، فلسفی ، ماہرِ قانون ، تاریخ دان ، ماہرِ طبیعات ، ماہرِ فلکیات ، ماہر طب ۔
غزالیؔ : ابو حامد غزالی (1058ء-1111ء) ۔ ایک فارسی مُفکرِ اسلام ، عالمِ دین اور فلسفی تھے-
بے آہ : آہ بھرے بغیر
سحر گاہی : صبحِ صادق کا وقت
نو امید : نا امید
رہبر : قائد ، رہنما
کم کوش : کم کوشش کرنے والے ، زور نہ مارنے والے، کم محنتی
راہی : راستے راستے پہ چلنے والا – یہاں مراد ہے مسلمان
طائرِ لاہُوتی : آسمانوں تک اڑنے والا پرندہ – یہاں مُراد ہے وہ شخص جو عالمِ محویت کا مسافر ہو – صوفی ادب میں اس شخص کے بارے میں کہا جاتا ہے جس کو فنا فی اللہ حاصل ہو-
دارا : ایک قدیم ایرانی بادشاہ ( 550ق م – 486 ق م) جو ایک عظٰم سلطنت کا مالک تھا
سکندر: سکندر اعظم – ایک یونانی باشاہ جس نے اس دنیا کے ایک بڑے حصے پر حکومت کی۔
اولٰی : اعلی ، بہتر
بوئے اسد اللہی : حضرت اعلی شیرِخُدا کی خوشبو – یعنی جس کی فقیری میں حضرت علی کا رنگ ہو
آئين جوانمردں : جواں لوگوں کا دسُتور یا وطیرہ –
حق گوئی : سچ کہنا
بے باکی : بات کرنے کی جُرات ، دلیری
رُوباہی : مکاری ، حیلے بنانا ، حیلہ گری ، بہانے بنانا ، عذر تلاش کرنا ۔