وہی ديرينہ بيماری ، وہی نا محکمی دل کی

وہی ديرينہ بيماری ، وہی نا محکمی دل کی

وہی ديرينہ بيماری ، وہی نا محکمی دل کی
علاج اس کا وہی آب نشاط انگيز ہے ساقی

تشریح:
مسلمان اسی پرانی بیماری میں مبتلا ہیں، یعنی ان کے دل ایمان پر پختہ نہیں رہے، وہ راہِ حق سے ڈگمگا رہے ہیں۔ اے ساقی! اس بیماری کا علاج ایمان کا وہی آب حیات ہے، جیسے حلق سے اتارتے ہی قلب و روح پر نشاط کی کیفیت چھا جائے۔ وہی دل کی کمزوری اور ناپختگی کو دور کر سکتا ہے


(شرح غلام رسول مہر)

Wohi Daireena Bemari, Wohi Na-Mehkami Dil Ki
Ilaj Iss Ka Wohi Aab-e-Nishaat Anghaiz Hai Saqi

For our inveterate sickness, our wavering heart, the cure—
That same joy‐dropping nectar as in the past, oh Saki.

ڈیزائن سید قطب